Asset 1

Global Go To Think Tank Index (GGTTI) 2020 launched                    111,75 Think Tanks across the world ranked in different categories.                SDPI is ranked 90th among “Top Think Tanks Worldwide (non-US)”.           SDPI stands 11th among Top Think Tanks in South & South East Asia & the Pacific (excluding India).            SDPI notches 33rd position in “Best New Idea or Paradigm Developed by A Think Tank” category.                SDPI remains 42nd in “Best Quality Assurance and Integrity Policies and Procedure” category.              SDPI stands 49th in “Think Tank to Watch in 2020”.            SDPI gets 52nd position among “Best Independent Think Tanks”.                           SDPI becomes 63rd in “Best Advocacy Campaign” category.                   SDPI secures 60th position in “Best Institutional Collaboration Involving Two or More Think Tanks” category.                       SDPI obtains 64th position in “Best Use of Media (Print & Electronic)” category.               SDPI gains 66th position in “Top Environment Policy Tink Tanks” category.                SDPI achieves 76th position in “Think Tanks With Best External Relations/Public Engagement Program” category.                    SDPI notches 99th position in “Top Social Policy Think Tanks”.            SDPI wins 140th position among “Top Domestic Economic Policy Think Tanks”.               SDPI is placed among special non-ranked category of Think Tanks – “Best Policy and Institutional Response to COVID-19”.                                            Owing to COVID-19 outbreak, SDPI staff is working from home from 9am to 5pm five days a week. All our staff members are available on phone, email and/or any other digital/electronic modes of communication during our usual official hours. You can also find all our work related to COVID-19 in orange entries in our publications section below.    The Sustainable Development Policy Institute (SDPI) is pleased to announce its Twenty-third Sustainable Development Conference (SDC) from 14 – 17 December 2020 in Islamabad, Pakistan. The overarching theme of this year’s Conference is Sustainable Development in the Times of COVID-19. Read more…       FOOD SECIRITY DASHBOARD: On 4th Nov, SDPI has shared the first prototype of Food Security Dashboard with Dr Moeed Yousaf, the Special Assistant to Prime Minister on  National Security and Economic Outreach in the presence of stakeholders, including Ministry of National Food Security and Research. Provincial and district authorities attended the event in person or through zoom. The dashboard will help the government monitor and regulate the supply chain of essential food commodities.

پانچواں اسلام آباد لٹریچر فیسٹیول شاندار تقریبات کے ساتھ اختتام پذیر ہو گیا
By:

 

اسلام آباد ( کلچرل رپورٹر) وفاقی دارلحکومت کا پانچواں سالانہ ادبی میلہ اتوارکی شب مارگلہ ہوٹل میں ختم ہوگیا۔ پانچویں اسلام آباد لٹریچر فیسٹیول کے آخری روز معروف فنکاروں، ادیبوں، شاعروں اور صحافیوں کی بڑی تعداد نے مختلف سیشنز اور پروگراموں میں شرکت کی۔ جڑواں شہروں سے تعلق رکھنے والے شہریوں نے تین روزہ اسلام آباد لٹریچر فیسٹیول میں ہزاروں کی تعداد میں شریک ہوکر ادب سے وابستگیکا اظہار کیا۔ سالانہ ادبی میلے میں ملک کے معروف شعراءاور ادیب افتخار عارف، عمر شاہد حامد اور ممتاز سیاسی رہنماءنفیسہ شاہ نے خطاب کےا۔ ا س موقع پر خطا ب کرتے ہوئے فیسٹیول کی بانی آکسفورڈ یونیورسٹی پریس کی مینجنگ ڈائریکٹر امینہ سید نے کہا کہ رواں سال کے ادبی میلہ کو پاکستان کے ستر سال مکمل ہونے سے منسوب کیا گیا تھا اور کوشش کی گئی کہ ان ستر سالوں کا احاطہ کیا جائے کہ ہم نے کیا کھویا اور کیا پایا ۔امینہ سےد کا کہنا تھاکہ اِس سال آکسفورڈ پرےس پاکستان کے حوالے سے70 کے لگ بھگ کتابےں شائع کر رہا ہے۔اُنھوں نے ا©دبی مےلے کی کامےابی پرشرکائ، مُنتظمےن اور جڑواں شہروںسے تعلق رکھنے والے شہرےوں کا شکریہ ادا کےا۔پانچوےں اِسلام آباد فےسٹےول کا اِنعقادآکسفورڈ ےونےورسٹی پرےس کی جانب سے کےا گےا جبکہ اِس سلسلے مےںرواں سال مےلے کے لئے PPI، ٹپال دانے دار، آواز پروگرام، SDPI، اطالوی سفارتخانہ، فرانسےسی سفارتخانہ،اور گوئٹے انسٹےٹےوٹ کا تعاون حاصل تھا۔ اِختتامی تقرےب سے پہلے اَدبی مےلے کے آخری روز کئی پُروگراموں اور سےشنز کا انعقاد کےاگےا۔جس مےں نامور اَدےبوں شاعروں ، صحافےوں، مصنف اور فنکاروں نے شرکت کی۔ مےلے کے آخری روز معروف فنکار انور مقصود کو خراجِ تحسےن پےش کرنے کے لئے اےک خصوصی سےشن کا انعقاد کےا گےا۔ جس مےں سرمد کھوسٹ ، حوری نورانی اور عمرانہ مقصود نے شرکت کی۔ صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان نے بھی کشمیر کے حوالے سے منعقد کئے گئے ایک سیشن میں شرکت کی جس میں دیگر مہمان اے جی نورانی اور ریاض کھوکھر تھے۔ادبی میلہ کے آخری روز داستان گوئی کے حوالے سے بھی ایک سیشن کا انعقاد کیا گیا جس میں عصمت چغتائی کی تحریروں کو پیش کیا گیا ۔ اس موقع پر معروف صحافیوں وسعت اللہ خان، مبشر زیدی اور ضرار کھوڑو نے اپنے معروف پروگرام ذرا ہٹ کہ بھی براہ راست پیش کیا۔ سوشل میڈیا کی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے ادبی میلے کے آخری روز ایک خصوصی سیشن کا بھی انعقاد کیا گیا عدنان کاکڑ، لینا حاشر، معید پیرزاد اور وجاہت مسود نے شرکت کی۔ میلے کے احتتام پر شائمہ سعید نے حاضرین کے سامنے کلاسیکل ڈانس پیش کیا۔ 

 
Source: http://www.nawaiwaqt.com.pk/E-Paper/Islamabad/2017-04-17/page-3/detail-1 

 

 

This article was originally published at:

The opinions expressed in this article are the author's own and do not necessarily reflect the viewpoint or stance of SDPI.