Asset 1

Global Go To Think Tank Index (GGTTI) 2020 launched                    111,75 Think Tanks across the world ranked in different categories.                SDPI is ranked 90th among “Top Think Tanks Worldwide (non-US)”.           SDPI stands 11th among Top Think Tanks in South & South East Asia & the Pacific (excluding India).            SDPI notches 33rd position in “Best New Idea or Paradigm Developed by A Think Tank” category.                SDPI remains 42nd in “Best Quality Assurance and Integrity Policies and Procedure” category.              SDPI stands 49th in “Think Tank to Watch in 2020”.            SDPI gets 52nd position among “Best Independent Think Tanks”.                           SDPI becomes 63rd in “Best Advocacy Campaign” category.                   SDPI secures 60th position in “Best Institutional Collaboration Involving Two or More Think Tanks” category.                       SDPI obtains 64th position in “Best Use of Media (Print & Electronic)” category.               SDPI gains 66th position in “Top Environment Policy Tink Tanks” category.                SDPI achieves 76th position in “Think Tanks With Best External Relations/Public Engagement Program” category.                    SDPI notches 99th position in “Top Social Policy Think Tanks”.            SDPI wins 140th position among “Top Domestic Economic Policy Think Tanks”.               SDPI is placed among special non-ranked category of Think Tanks – “Best Policy and Institutional Response to COVID-19”.                                            Owing to COVID-19 outbreak, SDPI staff is working from home from 9am to 5pm five days a week. All our staff members are available on phone, email and/or any other digital/electronic modes of communication during our usual official hours. You can also find all our work related to COVID-19 in orange entries in our publications section below.    The Sustainable Development Policy Institute (SDPI) is pleased to announce its Twenty-third Sustainable Development Conference (SDC) from 14 – 17 December 2020 in Islamabad, Pakistan. The overarching theme of this year’s Conference is Sustainable Development in the Times of COVID-19. Read more…       FOOD SECIRITY DASHBOARD: On 4th Nov, SDPI has shared the first prototype of Food Security Dashboard with Dr Moeed Yousaf, the Special Assistant to Prime Minister on  National Security and Economic Outreach in the presence of stakeholders, including Ministry of National Food Security and Research. Provincial and district authorities attended the event in person or through zoom. The dashboard will help the government monitor and regulate the supply chain of essential food commodities.

Published Date: Apr 25, 2021

SDPI Press release ‘Remembering the work and life of I. A. Rehman’(URDU)

جمہوریت اور انسانی حقوق کے علاوہ آزادی ئ اظہار کے لیے ان کی خدمات ناقبل فراموش ہیں، مقررین

اسلام آباد (                  ) انسانی حقوق کے نامور علمبردار اور معروف صحافی آئی اے رحمان کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے پالیسی ادارہ برائے پائیدار ترقی (ایس ڈی پی آئی)نے ایک خصوصی مکالمے کا اہتمام کیا۔’آئی اے رحمان کی زندگی اور کام پر ایک نظر‘ کے زیر عنوان مکالمے کے دوران مقررین نے ان کی رحلت کو ملک کے لیے ایک بڑے نقصان سے تعبیر کیا۔

انسانی حقوق کمیشن کے سیکرٹری جنرل حارث خلیق نے آئی اے رحمان کی زندگی کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ وہ گفتگو کے دوران مخاطب کی عزت نفس کا خاص خیال رکھتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ آئی اے رحمان نے ہمیشہ جبری گمشدگیوں  کے خلاف اورخطے میں امن کے علاوہ جمہوریت اور آزادیئ اظہار کے لیے بھرپور آواز اٹھائی۔ممتاز محقق احمد سلیم نے فیض احمد فیض کی رحلت کے بعد آئی اے رحمان نے ان کے مشن کو آگے بڑھایا۔ انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کمیشن  کو اب ان کے افکارکو آگے بڑھانے کا مشکل فریضہ انجام دینا ہو گا۔

ایس ڈی پی آئی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر عابد قیوم سلہری نے شرکاء کو بتایا کہ آئی اے رحمان ایس ڈی پی آئی کی تقریباً ہر اہم تقریب میں باقاعدگی سے شرکت کرتے تھے جو ادارے کے لیے ایک بڑا اعزاز ہے۔انہوں نے کہا کہ جن کا کوئی نگہبان نہ ہوتا تھا، آئی اے رحمان ان کی آواز بنتے تھے۔ ان کی خطے میں جمہوریت کے حوالے سے خدمات ناقابل فراموش ہیں۔سینئر صحافی عاصمہ شیرازی نے کہا کہآئی اے رحمان کی زندگی نوجوان صحافیوں کے لیے صحافت کے رہنما اصول سیکھنے کا اہم ذریعہ ہے۔

ممتاز سماجی کارکن کرامت علی نے کہا کہ آئی اے رحمان کی رحلت سے پیدا ہونے والا خلا کبھی پورا نہیں ہو سکتا۔ایس ڈی پی آئی کے ڈاکٹر شفقت منیر نے کہا کہ آئی اے رحمان ہمیشہ صحافت کے میدان  اور سول سوسائٹی کے لیے ایک قابل تقلید کردار رہیں گے۔ ڈاکٹر حمیرا اشفاق نے اس موقع پر کہا کہ آئی اے رحمان انسانیت کے  بہترین دوست تھے اور ادب سے ان کا گہرا لگاؤ ہمیشہ برقرار رہا۔ مکالمے کے دوران سینئر صحافی شہزادہ ذوالفقار اور بدر عالم نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور آئی اے رحمان کی زندگی کے مختلف پہلوؤں پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ صحافت کے میدان میں ان کا کردار مشعل راہ کا تھا اور نوجوان صحا فیوں کو ان کی ذات سے ہمیشہ بہت کچھ سیکھنے کا موقع ملتا تھا