Press Coverage

درآمدات کم ،مسابقتی رجحان میں اضافہ کیا جائے، گورنر اسٹیٹ بنک
  

اسلام آباد(کامرس رپورٹر ) گورنر سٹیٹ بنک رضا باقر نے کہا ہے کہ کورونا وباءسے پہلے درآمدات کا حجم ماہانہ 2 ارب ڈالر تھا جس میں ٹیکسٹائل ، چاول، سیمنٹ ، کیمیکل، اور ادویات شامل ہیں،مقامی تجارت کو بڑھا نے کیلئے ضروری ہے کہ درآمدات میں کمی کر کے مسابقتی رحجان میں اضافہ کیا جا ئے، معاشی سرگرمیوں میں اضافہ اور روز گار کے مواقع پیدا کرنے کیلئے سٹیٹ بنک نجی بنکوں اور چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کے ساتھ مل کر گھر بنانے کیلئے آسان شرائط پر قرض کی سہولت دے رہا ہے، حکومت ہائوسنگ اور تعمیرات کے شعبے کو ترقی دینے کیلئے موثر اقدامات کر رہی ہے،ان اقدامات کیلئے سٹیٹ بنک نجی بنکوں کی معاونت کر رہا ہے، وباءکے دوران پاکستان بہتر اقدامات کے باعث مشکلات کا شکار نہیں ہوا،ہمارے فوری اقدامات کے نتیجے میں پاکستان دیوالیہ ہونے اور منفی اثرات سے محفوظ رہا، اب پوری دنیا میں پاکستانی مصنوعات کی طلب بڑھ رہی ہے اور ہمارے برآمد کندگان کو آڈر مل رہے ہیں، ہمیں اپنی برآمدات کے ذریعے قومی پیداوار کی

شرح میں اضافے پر توجہ دینی چاہیے۔ اس امر کا اظہار انہوں نے پالیسی ادارہ برائے پائیدار ترقی (ایس ڈی پی آئی) کی4 روزہ 23 ویں پائیدار ترقی کانفرنس کے دوسرے روز کورونا وباءکے دوران معاشی اقدامات و لائحہ عمل کے حوالے سے گفتگو کے دوران کیا،یورپی یونین کی سفیر آندرولا کمینہارا نے کہا ہے کہ پاکستان میں وافر خوراک موجود ہے مگرغیر مناسب ا نتظامات کی وجہ سے یہ غریب اور کمزور طبقے کی پہنچ سے دور ہے،نیدر لینڈ کے سفیر والٹر پلمپ نے منڈیوں سے ہی تحفظ خوراک اور معیار کو محفوظ بنانے پر زور دیا ،لیفٹینٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ نے کہا سی پیک اور ایک خطہ ایک سڑک کا منصوبہ ترقی پزیر ملکوں کیلئے اُ مید کی کرن اور خوشحالی کا باعث ہو گا، چین کی ماحولیاتی فیڈریشن کے سربراہ سی گیائو یان نے کہا کہ چین ترقی کا روایتی طریقہ کار بدل کر ایک مضبوط معاشی طاقت کے طور پر پاکستان کی مشکلات کو سمجھ کر اسکے ساتھ تعاون کر رہا ہے۔

Source: https://jang.com.pk/news/858880